Tuesday, January 11, 2011

کشمیر جل رہا ہے

اسلام و علیکم

کل اس سال کا آخری دن ہے اور اس کے بعد ہم ایک اور نئے سال میں قدم رکھیں گے ہمیں اس ملک پاکستان کو حاصل کیے ہوں تریسٹھ سال ہو گئے ہیں اور آج تک ہم اپنے کشمیر کو آزاد نہیں کرا سکے ایک بہت ہی بڑے منصوبے کے تحت پاکستان کو اور پاکستانی عوام کو ایک ان دیکھی آگ میں دھکیل دیا گیا ہے اور افسوس کے ساتھ کہنا پڑ رہا ہے کہ ہم اس آگ میں جل رہے ہیں لیکن پھر بھی سوئے ہو ئے ہیں ہمیں سارا دن کمانے رات کو انٹرنیٹ موبائل ٹی وی (بشمول راقم ) فرصت ہی نہیں ہے کہ ہم اس ملک کی خاطر بھی کچھ کر لیں ہر کوئی اپنے بارے میں سوچ رہا ہے کو ئی مر رہا ہے تو مرنےدو میں تو زندہ ہوں کو ئی رو رہا ہے چلا رہا ہے تو مجھے کیا میں تو سکون کی زندگی گزار رہا ہوں
بات سے بات نکلے گی تو بڑھتی جائے گی ہمیں اپنے مسائل میں گھر کر اپنے کشمیری بہن بھائیں ماؤں بیٹیوں کو نہیں بھولنا چاہئے

سب سے پہلے آپ اس اعداد و شما ر کو پڑہیئے

صرف اس سال میں

کل شہادتیں ۔۔۔۔۔ چار سو بیالیس 442
مرد۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔تین سو چونسٹھ 364
عورتیں ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ گیارہ 11
معصوم بچے۔۔۔۔۔۔۔ سڑسٹھ67
تشدد بربریت سے انتہائی زخمی ہونے والوں کی تعداد چھ ہزار بہتر۔۔۔6072 یہ اتنی حد تک زخمی ہیں کہ اگر ان کا بروقت اچھا اور مؤثر علاج نا ہوا تو شاید ہم ان کو بھی کھو دین
گرفتار ہونے والوں کی تعداد دو ہزار ایک سو باسٹھ 2162 ہے
لاپتہ ہونے والوں کی تعداد ایک سو اکتیس 131 ہے
اور افسوس سے افسوس تر بات کہ ہماری چھیاسی 86 معصوم حور جیسی بہنوں بیٹیوں کی عزتوں سے کھیلا گیا
یہ تعداد صرف اس سال کی ہے یعنی 2010 کی اور یہ تعداد وہ ہے جو ہمیں ریکارڈ پر ملتی ہے اور جو ریکارڈ نہیں ہے اس کو تو بھول جائے۔۔

جنوری 1989 سے 2010 تک

شہید ہونے والوں کی تعداد 93539
گرفتار ہونے والوں کی تعداد 118813
خواتین جو بیوہ ہوئیں۔۔۔22747
جن بہنوں بیٹیوں کی عزتیں تار تار ہوئیں۔۔۔۔9986
بچے جو یتیم ہوئے۔۔۔۔۔۔107397

اس وقت بھارت کی تیرہ ریاستیں ایسی ہیں جہاں ہندو عسکریت پسند اپنی کاروائی کرتے رہتے ہیں ٹائم آف انڈیا کی رپورت کے مطابق بھارت میں اس وقت اسوچہتر ایسی تنظیمیں کام کر رہی ہیں جو ہندو عسکریت پسندی پھیلانا چاہتے ہیں
اس صدی کے ابتدائی دس سالوں میں ہونے والے پر تشدد واقعات جن میں ۔۔۔احمد آباد، گجرات، پاکستان سمجھوتا ایکسپریس۔۔۔ جیسے واقعات جن میں بے دردی سے مسلمانوں کا خون بہایا گیا جن میں ہماری ماؤں بہنوں بیٹیوں کی عزتیں تار تار کی گئی دنیا خاموش کیوں ہے آخر اقوام متحدہ خاموش کیوں ہے۔؟

کچھ تصاویر جو آپ کو لرزہ دیں گی۔۔۔























































































یہ تصویر دیکھ کر بھی اگر دنیا خاموش رہتی ہے جس میں ایک معصوم کشمیری بھائی کو برہنہ کر کےانڈین آرمی آفیسر کے سامنے کھڑا کیا گیا ہے کیا بیتی ہو گی اس شخص پر اگر ہم اس کی جگہ ہوتے تو؟؟؟؟





ایک معصوم نوجوان پر تشدد قصور؟؟؟؟ آزادی




ان میں کچھ تصاویر ایسی ہیں کہ مجھے ان کو شئیر کرنے سے پہلے کافی بار سوچنا پڑا کیونکہ وہ دل دہلا دینے والی ہیں اور ہو سکتا ہےان تصاویر پر ایڈمن کو اعتراض ہوتو براہ مہربانی ایڈمن ان تصاویر کو ڈیلیٹ کر سکتی ہے۔۔

اس تھریڈ کے میرے دو مقاصد تھے پہلا مقصد یہ ہے کہ دنیا کے سامنے کشمیر میں ہونے والے ظلم کو اجاگر کرنا اگر ہم کچھ اور نہیں کر سکتے تو کم از کم آج کے اس الیکٹرونک میڈیا کے زریعے ہی ہم کشمیر میں ہونے والے ظلم کو دنیا کے سامنے بے نقاب کر سکتے ہیں ۔۔۔ ہم کیا چند منٹ روزانہ اپنے معصوم کشمیری بہنوں بھائیوں کے لیے وقف نہیں کر سکتے۔۔۔ کیا ہمارا وقت ہماری مصروفیات ہمارے تفریح ان کے جان عزت سے زیادہ اہم ہے

ہم کچھ بھی نہ کریں ہم کم از کم ظالم کو ظالم اور مظلوم کو مظلوم دنیا کے سامنے بتا تو سکیں اور ان کے غم و دکھ میں برابر کے شریک ہوں

اور دوسرا میرا مقصد یہ تھا کہ آج ہم اپنے پاکستان میں جو حالات دیکھ رہے ہیں اور جو حال ہم کر رہے ہیں
ہمیں ملک مفت میں نہیں ملا تھا ہمارے بڑوں نے اس کے لیے بہت خون بہایا بہت عزتیں لٹی اس لینے نہیں کہ ہم صبح سے لے کر شام تک انڈین گانے گھر گھر میں انڈین بہیودہ فلمیں ڈرامے دیکھتے رہیں آج میرے پیار ے ملک کےگھر گھر میں انڈین ڈرامے کیوں دیکھے جاتے ہیں؟ گھر گھر میں انڈین گانے کیوں سنے جاتے ہیں؟ گھر گھر میں انڈین فلمیں کیو ں دیکھی جاتی ہیں ؟

اگر آپ کو گانے لازمی سننے ہیں ڈرامے فلمیں لازمی دیکھنی ہیں تو ہم اپنے پاکستانی کیوں نہیں دیکھتے اگر ان کا معیار اچھا نہیں ہے تو اپنے فیڈبیک سے اور رائے سے اس کو اپنے معیار پر لانے کی کوشش کیجئے

میری تمام لوگوں سے گزارش ہے کہ خدارا اپنے ملک کی اہمیت کو جانیں آزادی کی نعمت کا خداوند کا شکریہ ادا کریں اور اپنے اپنے طور اپنے پیارے ملک کے اپنی پیارے ملک میں بسنے والوں کے لیے محبت پیدا کریں

اللہ تعالیٰ مجھ پر آپ پر اور اس ملک پر اپنی خصوصی رحمتیں نازل فرمائے۔۔آمین

یا اللہ ہمارے کشمیری بہیں بھائیوں ماؤں بیٹیوں کی قربانی کا صلہ ان کو آزادی کی نعمت میں عطافرما۔۔۔ آمین

پاکستان زندہ باد

اپنا خیال رکھئے۔۔۔۔۔

اللہ نگہبان

اللہ حافظ

Main Pakistan Hoon (Must read)

Main Pakistan Hoon (Must read)

بسم اللہ الرحمن الرحیم

السلام علیکم دوستوں

ایک ) آپ کا اصلی نام کیا

اسلامی جمہوریہ پاکستان

دو )آپ کی عمر

چودہ اگست 2009 کو پورے 62 سال کی ہوجائے گی

تین ) شادی شدہ / غیر شادی شدہ / منگنی شدہ

تقریبا سترہ کروڑ اٹھائیس لاکھ عوام سب میرے بچے ہیں

چار) کیا کبھی کسی سے محبت کی ہے اگر کی ہے تو اس کا کیا نتیجہ نکلا

محبت کے لئے شروع سے میری عادت رہی ہے کہ جس نے مجھ سے جتنی محبت کی میں نے اس سے اتنی ہی محبت کی
مجھے حاصل کرنے کے لئے میرے جن بچوں نے قربانیاں دیں میں نے ان لوگوں کو نام دیا،رہنے کے لئے چھت دی،اور سب سے خاص انعام ان کی نسلوں کو ملا جس کا نام آزادی تھی
لیکن رفتہ رفتہ آنے والی نسلیں مجھ سے محبت کم کرتی جارہی ہیں اور آزادی کی عظیم نعمت کو بھلاتی چلی جارہی ہیں
ان نسلوں کو چاہیے کہ آزادی کی نعمت کو سمجھنے کے لئے ان لوگوںکو دیکھیں جن سے آزادی چھین لی گئی ہے اور آج سر عام ان کے بچوں کو بغیر کسی جرم کے گولیوں کا نشانہ بنا دیا جاتا ہے اور عورتوں کی بے عزتی کی جاتی ہے اور کوئی پوچھنے والا نہیں ہوتا
یہ ہوتی ہے آزادی جس کی اہمیت کو کسی کو اندازہ نہیں
اور ہوتا بھی کیسے ? بھلا کسی پیٹ بھرے کو روٹی کی قیمت کا اندازہ بھی ہوتا ہے ?
تو آج نتیجہ سب کے سامنے ہے کہ ان بچوں میں اور میری محبت میں فاصلہ بڑھتا جارہا ہے
بس میرا تو محبت میں یہی اصول ہے کہ مجھ سے جتنی محبت کرو گے اتنی ہی محبت پاو گے


پانچ ) کس جگہ سے تعلق ہے آپ کا

برا اعظم جنوبی ایشیا سے

چھ) آپ کو کھانے میں کیا پسند ہے

میری خوراک تو میرے بچوں کا ایماندری سے محنت کرناہے
میرے بچے جو کسی بھی شعبے سے تعلق رکھتے ہوں اپنی پوری محنت اور ایمانداری سے دل لگا کر محنت کرتے ہیں تو یقین مانیں کہ میرے جسم میں گویا جان سی پڑ جاتی ہے
آپ کہیں گے کہ محنت تو سب ہی کرتے ہیں
نہیں میرے دوستوں محنت اس کو نہیں کہتے کہ جائز ناجائز راستوں سے صرف اپنے عیش و عشرت کے لئے دولت کمائی جائے
بلکہ میرے لئے خوراک تو ایمانداری سے ٹیکس کی ادائیگی ہے
ناجائز راستوں سے دولت کمانے سے اجتناب ہے زر مبادلہ کے ذخائر ہیں
اور مجھے سب سے اچھی غذا اس وقت ملتی ہے کہ جب امن و امان ہو
تو میرا پیٹ بھرتا رہتا ہے جس کو آپ لوگ معیشت کہتے ہیں
اور میری یہ پسندیدہ خوراک میرے بچوں کے ہی کام آتی ہے
جب میںخوشحال ہوں گا تو یقینا میرا بچہ بچہ خوشحال ہوگا

سات ) اس سائٹ میں آپ کو سب سے زیادہ کیا چیز پسند آئی اور کس کی پوسٹنگ پسند کرتے ہیں
مجھے صرف اسی نہیں بلکہ ہر فورم پر اپنے بچوں کا محبت اور خوش اخلاقی سے ایک دوسرے سے بات چیت کرنا پسند آتا ہے
اور مجھے اس سائٹ پر صرف وہ پوسٹ ہی پسند آتیں ہیں جو میرے بچوں کو اچھی بات سیکھائیں اور بری باتوں سے روکیں


آٹھ )پ کی پسندیدہ ایکٹر اور ایکٹرس کون ہے

پسندیدہ تو نہیں بتا سکتا ہاں البتہ ناپسند ایکٹر میں مجھے وہ تمام سیاستدان جو محب وطن ہونے کی ایکٹنگ کر کے میرے بچوں کو بے وقوف بناتے ہیں اور مجھے شدید نقصان پہنچاتے ہیں
اور میرے بچوں پتہ ہے میرے بچوں کی بڑی اکثریت کے چاہتے ہوئے بھی کہ ان سے جان چھوٹ جائے اور اچھے لوگ ایماندار لوگ اس ملک کی باگ دوڑ سنبھال لیں لیکن پھر بھی ایسے لوگ میرے بچوں پر کیوں مسلط ہیں ?
کیوں کہ میرے بچوں کی بڑی اکثریت ایسی ہی ہوگئی ہے
اس کی آسان مثال یوں سمجھیں کہ جیسے میرے بچوں میں کوئی بزنس کے شعبے سے وابستہ ہے کوئی دوکاندار ہے تو کوئی سرکاری ملازم ہے تو کوئی پرائیوٹ ملازم ہے یا کوئی کسان ہے یا زمیندار ہے
سب بچے اپنے اپنے ضمیر کو گواہ بنا کر سوچیں کہ آپ لوگوں میں سے کون کون ہے جو میرا درد دل میں رکھ کر اپنی ایمانداری سے اپنے فرائض ادا کررہا ہے
جس کو جہاں موقع ملتا ہے تو اپنی طرف سے کرپشن میں ملوث ہے
بس فرق اتنا ہے کہ کوئی چھوٹے پیمانے پر تو کوئی بڑے پیمانے پر
تو جب بڑی اکثریت سے لوگ کرپشن میں ملوث ہوں گے تو ان کو رہنما کیسے اچھے مل سکتے ہیں ?
یہ تو آپ لوگ خود ہی سوچ سکتے ہیں کہ آج اگر (دس روپے والی کرپشن میں ملوث) کسی شخص کو وزیر بنادیا جائے تو وہ کیا کرے گا ?
کیا میرا درد محسوس کر کے ایمانداری سے وزارت کے فرائض ادا کرے گا
یا جب دس روپے والے کرپشن میں ملوث شخص کو اختیار دس کروڑ والے کرپشن کا مل جائے گا
تو وہ وہی حرکت کرے گا جو اپنی آج کی پوزیشن(دس روپے والی کرپشن میں ) میں کر رہا ہے
کیوں کہ جب وہ آج اپنے محدود دائرہ اختیار ہونے کے باوجود میرا درد دل میں نہیں رکھتا تو وہ وزیر بن کر کیسے میرا درد دل میں رکھے گا?
میرے بچوں یہ تو جیسی کرنی ویسی بھرنی والا معاملہ ہے


نو ) زندگی میں کس چیز کی کمی محسوس کرتے ہیں

ایک چھوٹی سی مثال دینا چاہوں گا اسی میں میری ساری کمیوں کا احساس موجود ہے کاش کہ میرے بچے سمجھ جائیں
ایک بادشاہ تھا وہ اپنے بستی میں ایک بڑا سا تالاب کھدواتا ہے اور پوری بستی میں اعلان کر دیتا ہے کہ آج رات کو پوری پستی والے اپنے اپنے گھروں سے ایک ایک بالٹی دودھ کی اس تالاب میں ڈالیں گے
پھر رات کو تمام بستی والے ایک ایک بالٹی اس تالاب میں ڈال دیتے ہیں
جب بادشاہ صبح صبح اس تالاب کو دیکھنے کے لئے جاتا ہے تو وہ حیران ہوجاتا ہے کہ پورے کا پورا تالاب بجائے دودھ کے پانی سے بھرا ہوتا ہے

میرے بچوں پتہ ہے ایسا کیوں ہوتا ہے ?
کیوں کہ بستی کا ہر شخص یہ سوچتا ہے کہ ہر کوئی تو دودھ کی بالٹی تالاب میں ڈال رہا ہے تو میں اگر اکیلا پانی کی بالٹی ڈال دوں گا تو اس سے کیا فرق پڑے گا اور رات بھی ہے کسی کو پتہ بھی نہیں چلے گا
میرے بچوں جب اسی طرح پوری کی پوری بستی نے یہی سوچ لیا تو اس تالاب میں پانی ہی بھرنا تھا دودھ کہاں سے ملتا

میرے بچوں آج میرا یہی حال ہے کہ میرے ہر بچے نے یہی سوچ لیا ہے کہ سب لوگ کرپشن میں ملوث ہیں اگر ایک میں کر رہا ہوں تو اس سے کیا فرق پڑے گا اور جب مرے بچوں کی بڑی اکثریت نے یہی سوچ لیا تو پھر میرا ایسا حال تو بننا ہی تھا
پھر میرے بچے کس کو روتے ہیں ? کیوں کسی سے گلہ کرتے ہیں کہ فلاںسیاستدان نے ایسا کیا فلاں سرکاری افسر نے ویسا کیا
میرے بچوں یہ تو سوچو کہ تم نے کیا کیا
کیا تم نہیں ذمہ دار میری تباہی کے ?
تم گلہ کرتے ہو کہ سارا تالاب پانی سے بھرا ہوا ہے
میرے بچوں یہ تو سوچو کہ تم نے کبھی دودھ کی بالٹی ڈالی ?


دس )اس سائٹ کے یوزرز کے لیئے کوئی پیغام دینا چاہے گے

میں اپنے تمام بچوں کے لئے ایک چھوٹا سا واقعہ بطور پیغام کے دینا چاہتا ہوں اگر میرے بچے مجھے زندہ رکھنا چاہتے ہیں تو اس پیغام پر ضرور عمل کریں گے
جب حضرت ابراھیم علیہ السلام کو آگ میں ڈالاجارہا تھا تو ایک ننھی سی چڑیا تھی جو اپنی چونچ میں پانی کا ایک قطرہ لاتی اور آگ کے پاس گرا دیتی ۔ کسی نے دیکھا تو ہنس کے کہا کہ اے ننھی سی چڑیا کیا تیرے اس پانی سے آگ بجھ جائے گی ۔ اس پر چڑیا نے کہا میں جانتی ہوں کہ میرے اس پانی سے آگ نہیں بجھے گی لیکن میں بروز قیامت تماشہ دیکھنے والوں کی صف میں کھڑے ہونے کے بجائے آگ بجھانے والوں کی صف میں کھڑا ہونا چاہتی ہوں ۔
میرے بچوں میرا بس یہی پیغام ہے کہ آپ اپنی طرف سے پانی ڈال دیں
آپ اپنی طرف سے دودھ کی بالٹی ڈالنا شروع کریں
کم سے کم آپ کا فریضہ ادا ہوجائے گا
اور جب میرے بچوں کی اکثریت یہ عمل شروع کردے گی تو یقینا پھر تالاب میں پانی کے بجائے دودھ نظر آنے لگ جائے گا


والسلام

پاکستان

Pakistan..My identity.........I Salute U...

Pakistan..My identity.........I Salute U...

I m going to paste here a msg of a Pakistani who loves Pakistan...like i love my Homeland...

Tu Nishaan-e-Azm-e-Alishan...
Someday
Inshallah

Things are becoming worse day by day... It is no more a country which our Quaid dreamt of nor the ideology is left... All what left is hopeless people, shattered dreams, agonizing pain, hunger, suffering, destructions, politics and a sinking voyage... If we say it's our fault it won't be wrong but to say destroying it our desire then this would be a lie... Time heals, but for our country tch tch the definition of healing has to be redefined...
But I must say, the thing which separates us from majority is that whenever a crisis come we stand all together... Yet I see this passion fading too...
I do not know what others desire to say but I say ay watan tujh per aaj bhi utni hi jaan kurbaan jitni pehley thi... and with the core of my heart I desire to say

"PAKISTAN
To be with you in these explosions
To be with you in the time of crisis
To be with you in these disasters
Is not a decision which is forced upon me
It is what I desire, I choose
To see this PROMINENT GREEN standing out its color
To see the prominent green in front of my eyes
To see our country, our flag and its colors stand out
Stand out even in the time of darkness....
To be a proud Pakistani

So lets pray for a better Pakistan, for better US... Pray that the hardships end and all which remains after that a Pakistan which rises, which motivates, which indulges no pain.
Lets pray for Pakistan not because we live here but because it lives in our heart and soul... We as a nation have come out of lots of disasters so why not unite again and pull this one heck of beautiful ship out of the storm and into the wide oceans sailing as never before...

__________________________________________________- _______________________
..PAkistan se mein sirf muhabbat nahi karta...PAkistan mera junoon hai...
..Muhabbat to shayad kabhi khatam ho sakti hai..but i think junoon jb had se zyada barh jata hai ti woh dewangi ban jata hai..or dewangi sirf mout k sath hi khatam hoti hai/.........................................

Redards
Mohammad Fahad Khalil................................

~~QUAID-E-AZAM~~ pricless words and interesting facts

~~QUAID-E-AZAM~~ pricless words and interesting facts 

InterestinG


"QuaiD-e-AzaM" Ki LifE MaiN "3" DateS SaB Se ImportanT HaiN.. 1. DatE Of BirtH "25 DecembeR" 2. DatE Of DeatH "11 SeptembeR" 3. IndependncE DaY"14 AugesT" SaB Se PehlE "14 AuguesT" AatI HaI, "14 AugesT" JisS DiN Ko0o AayE Gi To0o BaqI Ki "2" DateS BhI UsI DiN...

PRICELESS WORDS

“Come forward as servants of Islam, organise the people economically, socially, educationally and politically and I am sure that you will be a power that will be accepted by everybody.”

great words from Quaid Azam Mohammad Ali Jinah

" Think 100 times before you take the decision, but once that decision is taken, stand by it as one man "

ماڈرن خواتین

ماڈرن خواتین


ماڈرن خواتین مغرب کی تقلید کا شکار ہیں. انہیں اس بات کا احساس نہیں کہ ان کا اپنا دین ان کوکس بات کی ترغیب دے رہا ہے. وہ اندھادھند مغرب کے جال میں پھنستی جارہی ہیں. الله نے بنیادی طورپرعورت کےاندرحیا ڈال رکھی ہے لیکن شیطان یعنی مغرب کا کمال ہے کہ اس نےعورت کو اسکی حیا بھی بھلادی اور دین کی تعلیمات بھی، سو مسلمان عورت بے پردہ اور بے حیا ہوکر یہ محسوس کرنے لگی ہے کہ وہ بھی آخر ماڈرن بن ہی گئی. اسکی فطری حیا اس کو کچوکے لگاتی ہے لیکن وہ جدیدیت کے خوشنما لباس کو اتارنا پسند نہیں کرتی.



آخرکار اسے بے حیائی جیسے گناہ میں لذّت محسوس ہونا شروع ہوجاتی ہے اور اسی لذّت کے احساس کو پانے کے لئے وہ کپڑے پہن کربھی برہنہ نظر آنے لگتی ہے. جب مردوں کی گندی اور غلیظ نظریں اس کے بے پردہ جسم پر پڑتی ہیں تو وہ لطف کی وادیوں کی سیر کرنے لگتی ہے اور سمجھتی ہے کہ وہ دنیا کی حسین ترین عورت بن گئی ہے حالانکہ وہ صرف بدنظر مردوں کا شکار بنی ہوتی ہے.



ایسے لوگ بدنظری میں اس قدر مہارت حاصل کرلیتے ہیں کہ باپردہ خاتون کے پوشیدہ جسم سے بھی حرام مزے لیتے رہتے ہیں. یہ قرب قیامت کی نشانی ہے.



آج کسی خاتون کو پردے کی ترغیب دی جائے تو کہنے لگتی ہیں کہ اصل پردہ تو دل کا ہوتا ہے دل صاف ہونا چاہیے. اپنا اندر اچھا ہوتو مردوں کی بدنظری اور ہوس کچھ نہیں بگاڑسکتی. یہ بہت احمقانہ جاہلانہ اور بےوقوفانہ بات ہے.اگر دل ہی کو صاف رکھنا کافی ہوتا تو پردے کے بارے میں الله اور رسول صلی اللہ علیہ وسلم اتنے واضح احکام اور ان کی تشریح کیوں دیتے؟



تین ہی عورتیں ایسی بات کرسکتی ہیں ایک وہ جو بے پردگی میں لذّت پاتی ہو اور اسے چھپانے کے لئے اپنی نگاہ میں بڑے فلسفے پیش کر رہی ہو. دوسری وہ جو دین کے بارے میں شدید لاعلمی کا شکار ہوں.تیسری وہ جو پردے کرتی ہو لیکن اپنے آپ کو دوسری جدیدیت کی ماری خواتین کے سامنے کم تر محسوس کرتی ہو چناں چھ اس احساس کمتری کو چھپانے کے لئے ایسی احمقانہ باتیں کہتی ہو. یہ تیسری خاتون تو قابل حیرت ہے کہ اپنے دین پر عمل کرکے بھی احساس کمتری کا شکار ہے، کیا اسکو علم معلوم نہیں کہ الله رب العزت نے پردہ کرنے کا حکم دیا ہے؟ کیا اسکو معلوم نہیں کہ رسول صلی اللہ علیہ وسلم نے پردہ کرنے کی کتنی تاکید کی ہے؟ اسکو معلوم نہیں کہ اسکا مذہب اسلام کتنا بڑا اور سچا مذہب ہے. پھر وہ اپنے مذہب پر عمل کرنے سے کیوں کتراتی ہے؟ کیا اس لئے کہ لوگ اسکو پینڈو وغیرہ کہیں گے؟ تو ایسی عورت کو جان لینا چاہیے کہ سچائی کو بولنے اور اس پر عمل کرنے میں ہی اصل عظمت ہے.



کچھ خواتین پردہ نہ کرنے کا یہ عذر پیش کرتی ہیں کہ انہیں اس معاملے میں رشتہ داروں کی حمایت حاصل نہیں. اگر آپ کے رشتہ دار آپ کو روز قیامت جنّت میں جانے سے روکیں گے تو آپ کا ردعمل کیا ہوگا؟ یہی کہ آپ ضرور ضرور جنّت میں جا ئیں گی اور ان کی نادان بات کو بلکل بھی نہیں سنیں گے. اس طرح اس دنیا میں بھی آپ کے رشتہ دار آپ کو دین پر عمل کرنے سے روک رہے ہیں اور آپ کو معلوم ہے کہ دین اسلام ہی پر عمل کرکے آپ کے الله کی رضا اور خوشی اور جنّت الفردوس میں مقام پائیں گی تو آپ کو ان سے ڈرنے اور جھکنے کی ضرورت نہیں. آپ سکون سے اپنے دین پر عمل کریں. باحیا و باپردہ بننے اور الله رب العزت کی رضا کی مشتاق رہیں اس صورت میں الله رب العزت آپ کی ضرور مدد کریگا. اگر آپ ہرطعنوں کو پیچھے ہٹا کر با پردہ بن کر رہیں.



کچھ خواتین موسم گرما میں دوپٹے اوڑھتی ہیں جبکہ موسم سرما میں موٹی چادریں. نام یہ ہوتا ہے کہ حجاب اوڑھ رہی ہیں. بس ذرا موسم گرما میں گرمی محسوس ہوتی ہے تو بڑا حجاب چھوڑ کر بے پردہ ہوجاتی ہیں یعنی توہین حجاب کی جارہی ہے. ایسی خواتین سے گزارش ہے کہ براہ کرم یہ روش چھوڑدیجیے. مسلمان خاتون برقعے اور چادر میں پریشان نہیں ہوا کرتی ہے. اور پھر بےحیائی کی ٹھنڈک سے پردے کی گرمائش بہتر ہے. الله پاک ہمیں حیا وغیرت جیسی صفات سے مالامال فرمائیں کہ اسی میں ہماری عزت ہے.

Kia ya Such hai..............?

Film Star Meera in ....Khrian Khrian by Rashid Murad

Who Says, PAKISTAN IS A POOR COUNTRY SEE THIS

ONLY MUST WATCH BY EVERY PAKISTANI....3 MINS VIDEO WILL HELP ALL PAKISTANIS

Quaid aur Allama Iqbal Ka "REAL" Pakistan.

The Real Pakistan Part 2 of 2

The Real Pakistan Part 1 of 2

Total Pageviews